بچوں کو نزلہ وزکام سے بچانے کیلئے والدین یہ طریقہ اپنائیں

نزلہ وزکام بچے تو بچے بڑوں کو بھی اپنی لیپٹ میں لے لیتا ہے، یہ وائرس کی طرح ایک سے دوسرے میں منتقل ہوتا اور دیگر بیماریوں کے دروازے بھی کھولتا ہے۔

ماہرین نے اسی ضمن میں چند ایسی ہدایات جاری کی ہیں جن کی مدد سے والدین اپنے بچوں کو اس وائرس سے محفوظ رکھ سکتے ہیں۔ نزلہ و زکام سے بچوں کو سانس کی تنگی، سوتے وقت بے چینی، دودھ پینے میں مشکل ہوتی ہے۔ بعض اوقات بڑے عمر کے بچوں کو غذا نگلنے میں بھی تکلیف ہوتی ہے۔

نومولود بچوں میں نزلہ و زکام کی وجہ

طبی ماہرین کا کہنا ہے کہ دیگر کے مقابلے میں نومولود بچے زیادہ نزلہ وزکام کا شکار ہوتے ہیں اس کی بنیادی وجہ ان میں مدافعتی نظام کا کمزور ہونا ہے، نومولود بچے اگر نزلے کا شکار ہو جائیں تو ان کی ناک بھر جاتی ہے۔

اس طرح بچے کو سانس لینے میں دشواریاں پیش آتی ہیں اور رنگ پیلا ہو جاتا ہے۔

نزلہ و زکام کا علاج

والدین کو چاہیے کہ وہ نزلہ وزکام کا شکار نومولود بچے کی ناک پر گرم کمپریس لگائیں جس کے ذریعے بچے کے چہرے پر حرارت پہنچے گی، ماں کے دودھ سے بھی فائدہ پہنچے گا کیوں کہ اس میں قدرتی اینٹی بائیوٹک ہوتی ہے۔

اسی طرح اگر بڑے عمر کا بچہ اس وائرس کا شکار ہے تو اسے گرم جڑی بوٹیوں کے مشروبات فراہم کریں جو قوت مدافعت کو مضبوط کریں گے۔ لیموں اور شہد کو ملا کر استعمال کریں۔ والدین بچے کو ادرک کا ٹکڑا دیں اس کا ذائقہ بدلنے کے لیے اوپر شہد لگا دیں، چینی کا استعمال ہرگز نہ کریں۔

نزلہ وزکام کے علاج کے لیے نمکین محلول بھی استعمال کیا جاسکتا ہے۔

Comments