ڈینگی وائرس: اسلام آباد میں دفعہ 144 کی خلاف ورزی پر 3 مقدمات درج

اسلام آباد/کراچی/ سوات: ڈینگی وائرس نے پنجاب میں پنجے گاڑ لیے، سیکڑوں افراد متاثر جب کہ ڈینگی سے اب تک پنجاب میں 3 افراد جاں بحق ہو چکے ہیں، کراچی میں بھی ڈینگی نے دوبارہ سر اٹھا لیا ہے، سیکڑوں مریض زیر علاج ہیں۔

تفصیلات کے مطابق اسلام آباد میں ڈینگی وائرس کی وبائی صورت حال سے نمٹنے کے لیے دو دن قبل دفعہ 144 نافذ کی گئی تھی، جس کی خلاف ورزی پر آج تھانہ نون پولیس نے 3 مقدمات درج کر لیے ہیں۔

ضلعی انتظامیہ نے برتن یا دیگر اشیا میں پانی بھر کر رکھنے پر پابندی عاید کر رکھی ہے، یہ پابندی شہر میں ڈینگی مچھر سے بچاؤ کے لیے لگائی گئی ہے، ڈی سی اسلام آباد کی جانب سے ٹائر شاپس پر ٹائرز میں پانی جمع رکھنے پر بھی پابندی عاید کی گئی ہے۔

ادھر کراچی میں ڈینگی کے مزید 20 نئے کیسز رپورٹ ہو چکے ہیں، ڈینگی سرویلنس سیل کا کہنا تھا کہ رواں ماہ ڈینگی سے 8 افراد جان کی بازی ہار چکے ہیں۔

سوات کے ضلع مردان میں بھی 21 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہو گئی ہے، جنھیں میڈیکل کمپلیکس منتقل کر دیا گیا ہے، سوات کے سرکاری اسپتالوں میں بھی مزید 9 افراد میں ڈینگی وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔

آج پنجاب کے ضلع وہاڑی میں ڈی ایچ کیو اسپتال میں ڈینگی میں مبتلا 3 مریض داخل کیے گئے، سی ای او ہیلتھ کے مطابق تینوں مریض اسلام آباد میں رہایش رکھتے تھے، تینوں اسلام آباد ہی میں ڈینگی میں مبتلا ہوئے، تینوں مریضوں کے گھروں اور اطراف میں اسپرے کرا دیا گیا ہے۔

دریں اثنا، پنجاب میں ڈینگی پھیلنے کی بڑی وجہ سامنے آ گئی ہے، سیکریٹری پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ کیئر محمد عثمان نے حقیقت بتاتے ہوئے کہا کہ ڈینگی پھیلاؤ کی وجہ فرضی کارروائیاں اور اسپتالوں کی غلط رپورٹنگ ہے۔

انھوں نے بتایا کہ محکمہ پرائمری اینڈ سیکنڈری ہیلتھ نے اقدامات کا تھرڈ پارٹی ای ویلیوشن کا فیصلہ کیا ہے، تمام سرگرمیوں کی کڑی نگرانی کا نظام بھی لایا جا رہا ہے، تھرڈ پارٹی ایویلیوشن موبائل ایپلی کیشن سے کی جائے گی، اس سلسلے میں متعلقہ افسران کو فوری کام مکمل کرنے کی ہدایت جاری کر دی گئی ہے۔

یاد رہے گزشتہ روز کوہاٹ کی تحصیل لاچی میں ڈینگی کے مزید 2 مریض ڈسٹرکٹ اسپتال میں داخل کیے گئے، اسپتال ذرایع نے بتایا کہ ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 14 ہو گئی۔

راولپنڈی میں گزشتہ روز 24 گھنٹے میں مزید 90 شہری ڈینگی بخار کا شکار ہوئے تھے، جس کے بعد ڈینگی سے متاثرہ مریضوں کی تعداد 1888 ہو گئی، پوٹھوہار ٹاؤن کے علاقوں سے 24 گھنٹے میں مزید 74 افراد ڈینگی کا شکار ہوئے۔

لاہور شہر میں ڈینگی پر قابو پانے کے لیے گزشتہ روز ڈی سی نے مختلف علاقوں کے دورے کیے، حفاظتی اقدامات کے با وجود ضلعی حکومت کی نا اہلی کا پول کھل گیا، گلبرگ میں زیر تعمیر پلازے سے ڈینگی لاروا برآمد کیا گیا، احتیاطی تدابیر اختیار نہ کرنے پر زیر تعمیر بلڈنگ کا کام رکوا دیا گیا، جب کہ پلازے کے مالک شہباز کے خلاف مقدمہ درج کر کے پلازہ سیل کر دیا گیا۔

دوسری طرف وزیر اعظم کے معاون خصوصی ظفر مرزا نے فیڈرل جنرل اسپتال چک شہزاد کا دورہ کیا، ڈاکٹر ظفر مرزا نے فیڈرل جنرل اسپتال میں ڈینگی وارڈ کا افتتاح کیا، انھوں نے کہا حکومت ڈینگی کو کنٹرول کرنے کے لیے اقدامات کر رہی ہے، راولپنڈی میں بیڈز کی کمی کے باعث مریضوں کو اسلام آباد منتقل کیا جا رہا ہے، ڈینگی سے متعلق صورت حال قابو میں ہے۔

انھوں نے بتایا کہ پمز اسپتال اور پولی کلینک میں خصوصی ڈینگی وارڈ قایم ہیں، گزشتہ برسوں کی نسبت ڈینگی کے مریضوں کی تعداد اب کم ہے، ہر گرزتے دن ڈینگی کیسز کی تعداد میں کمی آئے گی۔

Comments

comments