اسلام آباد ہائیکورٹ کا چڑیا گھر کے جانوروں کو محفوظ پناہ گاہ منتقل کرنے کا حکم

اسلام آباد ہائی کورٹ  نے  بنیادی ضروریات اور سہولیات کی عدم موجودگی کے باعث وفاقی دارالحکومت کے  مرغزار چڑیا گھر کے تمام جانوروں کو محفوظ پناہ گاہوں میں منتقل کرنے کا حکم دے دیا۔

چیف جسٹس اسلام آباد ہائی کورٹ جسٹس اطہر من اللہ نے چڑیا گھر میں جانوروں کی حالت زار سے متعلق کیس کا  67 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ جاری کر دیا۔

تفصیلی فیصلے میں عدالت نے حکم دیا ہے کہ کاون نامی ہاتھی کو 30 دن اور باقی تمام جانوروں کو 60 دن کے اندر محفوظ پناہ گاہوں میں منتقل کیا جائے۔

عدالت کا کہنا ہے کہ کاون نے مرغزار چڑیا گھر میں بہت تکلیف برداشت کرلی، ہاتھی سے متعلق وائلڈ لائف بورڈ سری لنکن ہائی کمیشن سے بھی رابطہ کرے  اور ہاتھی کو کو ملک کے اندر یا بیرون ملک جہاں بھی ممکن ہو پناہ گاہ میں منتقل کیاجائے۔

فیصلے میں کہا گیا ہے کہ اسلام آباد کا چڑیا گھر بنیادی ضروریات اور سہولیات نہیں رکھتا اور وہاں قوانین کی مسلسل خلاف ورزی کی جارہی تھی۔