برش کے بجائے سوئی، دھاگے سے مصوری کا خواب پورا کرنے والا فنکار

سلائی مشین سے مصوری کے دلچسپ عکس کو بنانے والے فنکار  ارون کمار بجاج—.فوٹو/ بشکریہ ارجن کمار فیس بک

سلائی مشین سے تو صرف کپڑے سیے جاتے ہیں اور اگر مصوری کرنی ہو تو اس کے لیے منفرد رنگوں اور برش کی ضرورت ہر حال میں ہوتی ہے لیکن کیا سلائی مشین کے ذریعے مصوری جیسے فن پارے بنائے جاسکتے ہیں؟

جی ہاں ارون کمار بجاج نامی بھارتی فنکار سلائی مشین کے ذریعے ایسے فن پارے تخلیق کرتے ہیں، جو بالکل پینٹنگ کی طرح معلوم ہوتے ہیں اور جنہیں دیکھ کر سب حیران رہ جاتے ہیں۔

آڈیٹی سینٹرل کی رپورٹ کے مطابق ارجن کو بچپن سے ہی مصوری کا شوق تھا، لیکن والد کے انتقال کے بعد گھر کی ذمہ داری ان کے کاندھوں پر آگئی اور انہیں اپنے والد کا کام سنبھالنا پڑا، جو پیشے کے اعتبار سے درزی تھے۔

لیکن ارجن نے ہار نہیں مانی اور سلائی مشین اور دھاگوں کی مدد سے ہی ایسے فن پارے بنانے شروع کردیئے، جو بالکل اصلی مصوری کا ہی کوئی شاہکار معلوم ہوتے۔

سلائی مشین اور رنگین دھاگوں کا کمال—۔فوٹو/ بشکریہ ارجن کمار فیس بک

ارجن کا کہنا ہے کہ کپڑے پر بنائے گئے اسکیچ پر وہ صرف ایک ہی بار میں رنگا رنگ دھاگوں کی مدد سے کام کرتے ہیں تاکہ مصوری کا عکس بالکل حقیقی لگے۔

35 سالہ فنکار نے بتایا، ‘جب میرے والد کا انتقال ہوا تو میں 16 برس کا تھا، میں نے اسکول چھوڑ دیا تھا لیکن اپنے شوق کو نہیں چھوڑا، یہی وجہ ہے کہ آج میں مصور بننے کا خواب برش کے بجائے سوئی اور دھاگے سے پورا کر رہا ہوں’۔

ارجن کی تیار کردہ تصاویر میں دیکھا جاسکتا ہے کہ وہ اتنی صفائی سے اپنی مہارت کا ثبوت دیتے ہیں کہ جو دیکھتا ہے، وہ اسے مصوری ہی سمجھتا ہے۔

ارجن کا تیار کردہ ایک شاہکار—.فوٹو/ بشکریہ ارجن کمار فیس بک