ڈی ایس پی اور دیگر اہلکاروں کے سامنے سانپ مارا، حلیم عادل نے بیان ریکارڈ کرالیا

ڈی ایس پی کو کہا کہ اس کی ویڈیو اور تصاویر اپنے افسران کو بھیجیں، حلیم عادل شیخ— فوٹو:فائل 

پاکستان تحریک انصاف کے رہنما و سندھ اسمبلی میں قائد حزب اختلاف حلیم عادل شیخ نے کراچی پولیس کے افسران کو  اپنا بیان ریکارڈ کرالیا۔

حلیم عادل شیخ نے سینیئر سپرٹنڈنٹ آف پولیس (ایس ایس پی) سٹی سرفراز نواز اور ایس ایس پی کورنگی فیصل چاچڑ کو بیان دیا۔

حلیم عادل نے اپنے بیاں میں کہا کہ کمرے کے ساتھ ہی باتھ روم کے باہر سانپ برآمد ہوا جس پر انھوں نے پہلے چپل ڈھونڈی پھر سامنے چوکھٹ کی لکڑی کا ٹکڑا ملا۔

ان کا کہنا تھاکہ الماری سے گرنے والے برتنوں کا شور سن کر ڈپٹی سپرٹنڈنٹ آف پولیس (ڈی ایس پی) اور دیگر اہلکار آئے جب ڈی ایس پی اور عملہ کمرے میں آیا تو سانپ زندہ تھا اور ان سب کے سامنے سانپ مارا۔

حلیم عادل کا کہنا تھا کہ میں  نے ڈی ایس پی کو کہا کہ اس کی ویڈیو اور تصاویر اپنے افسران کو بھیجیں۔

انہوں نے کہا کہ باتھ روم کی چھت میں تین سے چار انچ کا سوراخ تھا، افسران نے بتایا ہر جگہ سی سی ٹی وی کیمرے لگے ہیں لیکن کمرے کے باہر کوریڈور اور سیڑھیوں پر کوئی کیمرا نہیں تھا۔

پی ٹی آئی رہنما نے بیان میں مزید کہا کہ پولیس افسران کی اجازت سے گھر سے کھانا منگوانا شروع کیا تو افسران نے کھانا چیک کرانے اور ایک سپاہی کو ساتھ کھلانے کی ہدایت کی، تین مقامات پر تلاشی کے بعد کھانا پہنچایا جاتا تھا۔